بھارت کے دہشتگردی میں ملوث ہونے کے ثبوت دُنیا کو دکھا ئیں گے،حنا ربانی کھر

وزیر مملکت برائے امور خارجہ حنا ربانی کھر نے بدھ کے روز کہا کہ پاکستان بھارت کی سرپرستی میں ہونے والی دہشت گردی کی سرگرمیوں کا معاملہ اقوام متحدہ (یو این) سمیت بین الاقوامی فورمز پر اٹھائے گا۔

کسی بھی ملک نے دہشت گردی کو ہندوستان سے بہتر اپنے فائدے کے لیے استعمال نہیں کیا،‘‘ انہوں نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’پاکستان میں دہشت گردی کی سرگرمیوں میں ہندوستان کے ملوث ہونے کے شواہد‘‘ پر مشتمل ڈوزیئر کے حوالے سے تفصیلات کا اشتراک کیا جائے۔

حنا ربانی نے کہا کہ پاکستان گزشتہ سال جون میں لاہور کے جوہر ٹاؤن دھماکے میں ہندوستانی ملوث ہونے کے معاملے کی “مسلسل” پیروی کرے گا جس میں تین افراد ہلاک اور 22 زخمی ہوئے تھے۔

کھر نے کہا کہ “اقوام متحدہ، ایف اے ٹی ایف ہندوستان کو جوابدہ بنانے کے لئے ذمہ دار ہے”، انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستان نے یو این سلامتی کونسل میں 4 افراد کی فہرست بلاک کردی ہے۔ ایم او ایس نے چار ہندوستانی شہریوں کے نام بھی شیئر کیے جن کے ناموں کی فہرست کو بلاک کیا گیا تھا، یعنی گووندا پٹنائک، پارتھاس آرتی، راجیش کمار اور مسٹر ڈمگارا۔

حنا ربانی کھر نے مزید روشنی ڈالی کہ بھارت ایک ’’بدمعاش ریاست‘‘ کے طور پر کام کرتا رہا۔

کھر نے کہا کہ لاہور کا واقعہ بین الاقوامی انسداد دہشت گردی اور دہشت گردی کی حکومتوں کی مالی معاونت کے انسداد کی ساکھ اور سالمیت کا امتحان ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ خطے میں اپنے تسلط پسندانہ عزائم کو آگے بڑھانے کے لیے پڑوسی ممالک کو غیر مستحکم کرنے اور ان کی معیشتوں کو کمزور کرنے میں بھارت کا مستقل کردار ہے۔

ان کا یہ پریسر وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کی جانب سے اس بات کی تصدیق کے ایک دن بعد آیا ہے کہ جون 2021 میں لاہور میں ہونے والے جوہر ٹاؤن دھماکے کی تحقیقات میں بھارت کے ملوث ہونے کے ناقابل تردید ثبوت ملے ہیں۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ انٹرپول نے را کے تین ایجنٹوں سنجے کمار تیواری، وسیم حیدر خان اور اجمل کے ریڈ وارنٹ جاری کیے تھے۔ وہ بم دھماکے میں ملوث باقی دہشت گردوں کے ریڈ وارنٹ حاصل کرنے میں بھی پراعتماد ہے۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ 2021 کے جوہر ٹاؤن بم دھماکے کے چاروں ملزمان کو تین بار سزائے موت سنائی گئی تھی۔

حنا ربانی کھر افغان عبوری حکومت کے ساتھ مذاکرات کے لیے کابل پہنچ گئیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں

five × 4 =