بجلی کی لوڈشیڈنگ سے تنگ آکر کراچی کے عوام سڑکوں پر آگئے، پولیس سے تصادم۔

بجلی کی لوڈشیڈنگ سے تنگ آکر کراچی کے عوام سڑکوں پر آگئے، پولیس سے تصادم.

پورے شہر میں مسلسل اور طویل گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کے باعث کراچی کے عوام آج ایک بار پھر سڑکوں پر نکل آئے۔

نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) کے ذرائع نےبتایا کہ ملک میں بجلی کی طلب 22,500 میگاواٹ ہے جب کہ موجودہ سپلائی 28,000 میگاواٹ ہے جس سے 5,500 میگاواٹ کا شارٹ فال رہ گیا ہے – اس وجہ سے کئی گھنٹے بجلی کی بندش جاری ہے۔

کراچی کے گڈاپ ٹاؤن میں ایک دن میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 18 گھنٹے تک جا پہنچا ہے جب کہ شاہ فیصل کالونی، ملیر، سرجانی ٹاؤن، گلستان جوہر، جہانگیر روڈ کے اطراف کے علاقوں، سلطان آباد اور کالا پل سمیت دیگر علاقوں میں ، 14 گھنٹے یا اس سے زیادہ لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔

جس کے جواب میں ماڑی پور کے رہائشی (پیر) سے ماڑی پور روڈ پر احتجاج کر رہے ہیں۔ ان کا احتجاج اب 20 گھنٹے سے زائد جاری ہے۔ جبکہ آئی سی آئی پل سے لیاری ایکسپریس وے تک ٹریفک بھی معطل ہے۔

مزید بڑے ٹریلرز اور ٹرکوں کی لمبی قطار کی وجہ سے ایک بڑے ٹریفک جام نے آئی سی آئی پل کو سائٹ ایریا اور ماڑی پور روڈ سے ملانے والی سڑک کو بھی بلاک کر دیا۔

پولیس نے اب تک چار مظاہرین کو گرفتار کیا ہے اور انہیں منتشر کرنے کے لیے واٹر کینن کا استعمال کیا ہے۔

ایک روز قبل تین ہٹی، صدر پریڈی اسٹریٹ، جوبلی مارکیٹ، شاہ فیصل کالونی، سرجانی ٹاؤن، یونیورسٹی روڈ، ایم ٹی خان روڈ، نشتر روڈ اور 14 دیگر علاقوں میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے۔

کے الیکٹرک کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاور سپلائی کمپنی نے شہر کے کئی علاقوں میں آپریشن شروع کیا ہے جس کے نتیجے میں لیاقت آباد، ناظم آباد، گارڈن، بہادر آباد، ٹیپو سلطان اور صدر سمیت دیگر علاقوں میں 1397 کلو گرام سے زائد کنڈا تاریں کاٹ دی گئی ہیں۔

کراچی میں فائرنگ کا واقعہ, چار بہنوں کا اکلوتا بھائی قتل ہو گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

one × 4 =