ہندوستان کے کویوڈ یتیموں کا کیا ہوگا؟

-بھارت میں کوویڈ 19 کی بڑھتی ہوئی اموات کے ساتھ سینکڑوں بچوں کو صدمہ پہنچا ہے اور وہ مشکلات میں پڑ گئے ہیں

کوویڈ ۔19 کی دوسری لہر پورے ہندوستان میں تباہی مچا رہی ہے ، ملک میں روزانہ چار لاکھ سے زیادہ کیسز رپورٹ ہورہے ہیں ، ہزاروں خاندان اس مہلک وائرس کی وجہ سے اپنے پیاروں سے محروم ہوگئے ہیں۔

جبکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ دوسری لہر میں اموات کی شرح پچھلے سال کی لہر کی طرح ہی ہے ، ہندوستانی حکومت کے مشترکہ اعدادوشمار سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ 30 سے 40 سال کی عمر کے نوجوانوں میں ، بیماری کی موت پہلی لہر کے مقابلے میں زیادہ ہے . اس کا مطلب ہے کہ یہاں زیادہ سے زیادہ چھوٹے بچے اپنے والدین کو کھو رہے ہیں اور کچھ مکمل طور پر تنہا رہ گئے ہیں کیونکہ ان کا پورا کنبہ وائرس کا شکار ہوگیا ہے۔

بچوں سے بدسلوکی میں اضافہ

وبائی مرض کے دوران 14 سال کی کم عمر لڑکیوں کے اپنے گھر والوں میں جنسی استحصال کرنے کی اطلاعات ہیں ، ایسی نابالغ لڑکیوں کے بھی واقعات ہیں جنہیں بہت کم اجرت پر کام کرنے پر مجبور کیا جارہا ہے۔

بھارت میں صدمے سے متاثرہ بچوں کے ساتھ کام کرنے والی پروٹسن این جی او کے بانی سونل سنگھ کا کہنا ہے کہ پچھلے کچھ مہینوں سے صورتحال انتہائی کشیدہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

14 − twelve =