سابق وزیر کا دعویٰ ہے کہ انہیں اسرائیل کے دورے پر زبردست مثبت ردعمل ملا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے سابق چیئرمین اور وزیر مملکت برائے انسانی ترقی ڈاکٹر نسیم اشرف نے دورہ اسرائیل کے دوران ایک اور تنازع کھڑا کر دیا ہے۔

سابق پی سی بی چیف اس وفد کا حصہ ہیں، جس میں ممتاز پاکستانی امریکی رہنما، صحافی اور مذہبی شخصیات شامل ہیں، جو بیک چینل بات چیت کے لیے اسرائیل کا دورہ کر رہا ہے۔

اسرائیل کے ایک بین الاقوامی نیوز چینل I24NEWS کو انٹرویو دیتے ہوئے ڈاکٹر نسیم نے کہا کہ وفد کو پاکستان میں بہت زیادہ مثبت ردعمل ملا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمیشہ کوئی نہ کوئی تنقید اور نفی ہوتی رہے گی۔ تاہم امن کے فروغ کے لیے دونوں ممالک کے درمیان عوام کے درمیان رابطے اہم ہیں۔

جب پاکستان اور اسرائیل کے درمیان سفارتی تعلقات کے امکانات کے بارے میں سوال کیا گیا تو سابق وزیر مملکت نے انکشاف کیا کہ پاکستان اسرائیل کے ساتھ تعلقات رکھنا چاہتا ہے۔ تاہم، اس کے ساتھ ساتھ، پاکستان فلسطینی عوام کے حق خودارادیت کے لیے مضبوطی سے کھڑا ہے، ڈاکٹر نسیم نے واضح کیا۔

وفد کے دورے کا اہتمام امریکن مسلم اینڈ ملٹی فیتھ ویمنز امپاورمنٹ کونسل (اے ایم ایم ڈبلیو ای سی) اور شاراکا نے کیا ہے۔ وفد نے حال ہی میں اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ سے بھی ملاقات کی۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر گردش کرنے والی تصاویر سے پتہ چلتا ہے کہ میٹرو 1 نیوز کے اینکر امتیاز میر، آواز ٹی وی کے سی ای او فیض بروہی اور جیو/جنگ گروپ کے عارف نقوی بھی وفد کا حصہ ہیں۔

غزہ میں اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان شدید بمباری کا تبادلہ

اپنا تبصرہ بھیجیں

17 + 15 =