شاداب خان نے اعتراف کیا کہ ان کی غلطیوں کی وجہ سے پاکستان کو ایشیاء کپ میں نقصان اٹھانا پڑا.

پاکستان کے وائٹ بال کے نائب کپتان شاداب خان نے ایشیا کپ 2022 کے فائنل میں سری لنکا کے ہاتھوں عبرتناک شکست کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ شاداب فیلڈنگ کے دو حادثات میں ملوث تھا جب اس نے خطرناک مڈل آرڈر بلے باز بھانوکا راجا پاکسے کے کیچز گرائے، جس نے میچ کا رخ سری لنکا کے حق میں موڑ دیا۔

دبئی انٹرنیشنل کرکٹ اسٹیڈیم میں پاکستان نے شاندار آغاز کیا کیونکہ بابر کے جوانوں نے سری لنکا کو 9 اوورز کے اندر 5/58 پر ڈھیر کردیا تھا لیکن راجا پاکسے اور وینندو ہسرنگا کے زبردست جوابی حملے نے اپنی ٹیم کو کھیل میں واپس لایا۔ جس طرح سری لنکا فائٹ بیک کر رہا تھا، پاکستان کو ایک بار نہیں بلکہ دو بار میچ میں واپس آنے کا موقع ملا، لیکن شاداب خان کیچ پکڑنے میں ناکام ہونے کی وجہ سے یہ امکانات ہار میں بدل گۓ۔

میدان میں شاداب کی ناکامی سری لنکا کی جانب سے مضبوط واپسی کا باعث بنی کیونکہ اس نے پہلی اننگز میں بورڈ پر 170 رنز بنائے تھے۔ مین ان گرینز جواب میں ناکام ہو گئے اور 147 رنز پر ڈھیر ہو گئے اسطرح سری لنکا تاریخ میں چھٹی بار ایشیاء کا چیمپئن بن گیا۔

شاداب نے ٹویٹر پر پاکستانی کرکٹ شائقین سے معافی مانگی اور نقصان کا ذمہ دار اپنے سر لے لیا۔ انہوں نے کہا کہ ‘کیچز جیتنے والے میچز’ اور وہ ٹیم کو مایوس کرنے پر معذرت خواہ ہیں۔ شاداب نے مزید کہا کہ ٹورنامنٹ میں شاندار کارکردگی پر پاکستانی کھلاڑیوں کی تعریف کی اور سری لنکن ٹیم کو ٹرافی جیتنے پر مبارکباد دی۔

پاک بمقابلہ افغانستان: ایشیاء کپ کے میچ میں جھگڑا کرنے والے شائقین پر متحدہ عرب امارات کے حکام نے 3,000 درہم جرمانہ عائد کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

thirteen − 8 =