پاک بمقابلہ افغانستان: ایشیاء کپ کے میچ میں جھگڑا کرنے والے شائقین پر متحدہ عرب امارات کے حکام نے 3,000 درہم جرمانہ عائد کر دیا۔

پاک بمقابلہ افغانستان: ایشیاء کپ کے میچ میں جھگڑا کرنے والے شائقین پر متحدہ عرب امارات کے حکام نے 3,000 درہم جرمانہ عائد کر دیا۔

پاکستان اور افغانستان کے درمیان ایشیاء کپ کے میچ کے دوران شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم میں اسٹینڈز میں ایک دوسرے سے جھڑپ کرنے والے شائقین پر متحدہ عرب امارات کے حکام نے 3,000 درہم جرمانہ عائد کیا ہے۔

پاکستانی روپے میں یہ رقم تقریباً 200,000 روپے کے برابر ہے۔

پولیس نے جرمانہ عائد کرنے والوں کو خبردار کیا ہے کہ اگر دوبارہ ایسا تشدد ہوا تو انہیں جیل یا ملک بدر کیا جا سکتا ہے۔

ایک دن پہلے، متحدہ عرب امارات کے حکام نے کہا تھا کہ وہ تماشائیوں پر کڑی نظر رکھیں گے اور احاطے کو پہنچنے والے کسی بھی نقصان یا دوسرے تماشائیوں کو پہنچنے والے نقصان سے سختی سے نمٹا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ شائقین کو قواعد پر عمل کرنا چاہیے اور کھیلوں کا میدان ناظرین سمیت سب سے اسپورٹس مین شپ کا مطالبہ کرتا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ، پاکستان کرکٹ بورڈ نے یہ معاملہ باقائدہ طور پر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) اور ایشین کرکٹ کونسل (اے سی سی) دونوں کے میں اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

پی سی بی کے چیئرمین رمیز راجہ نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہا: “آپ غنڈہ گردی کو کرکٹ سے نہیں جوڑ سکتے اور یہ ماحول آپ کو بیمار کر دیتا ہے، ہم آئی سی سی کو لکھیں گے، تشویش کا اظہار کریں گے، اور جو کچھ ہم کر سکتے ہیں کریں گے کیونکہ منظر بہت ہی برا تھا۔

سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر نے ٹویٹر پر افغانستان کے کھلاڑیوں کو ان کے تکبر پر تنقید کا نشانہ بنا ڈالا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

11 + 18 =