مری کی عوام کا ایک اور اہم مطالبہ پورا ہو گیا ۔

مری کی عوام کا ایک اور اہم مطالبہ پورا ہو گیا ۔ آئی جی پولیس پنجاب نے 2 نئے تھانہ جات: تھانہ پھگواڑی اور تھانہ پتریاٹہ کا باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا ۔

گزشتہ چند سالوں سے سیاحوں کے بڑھتے ہوئے رش اور بڑھتی ہوئی ٹریفک کی وجہ سے تحصیل مری کے مضافاتی علاقوں سے مری کے اکلوتے تھانے تک رسائی بہت مشکل تھی ۔

گرمائی سیزن اور برف باری کے دوران سیاحتی سرگرمیوں اور وی آئی پیز کی مری میں موجودگی کی وجہ سے مقامی سائلین کو انصاف کے حصول اور تھانے سے متعلقہ دیگر کاموں بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا ۔

اکلوتا تھانہ اور سٹاف کی کمی کی وجہ سے مقامی اور بغیر سفارش کے عام لوگوں کو پوری طرح نظر انداز کر دیا جاتا تھا اور لوگ صحیح معنوں میں رل جاتے تھے ۔

حالیہ دہائی میں مری میں سیاحتی سرگرمیاں بڑھنے سے لڑائی جھگڑے اور چھوٹے جرائم میں بھی اضافے کے ساتھ ساتھ نوجوان نسل میں منشیات کے استعمال کا رجحان بہت تیزی سے بڑا ۔

بدقسمتی سے یہ علاقہ جو ہمیشہ امن و امان کا گہوارہ رہا اور مضبوط علاقائی روایات کے پاس منشیات کی لعنت سے عمومی طور پر پاک رہا حالیہ سات آٹھ سالوں میں منشیات فروشوں کے بڑھتے ہوئے نیٹ ورکس کا شکار ہو گیا ۔

منشیات فروشوں کے اس نیٹ ورک کو توڑنے کے لئے جہاں مربوط پالیسی کی ضرورت ہے وہاں زیادہ بڑے پیمانے پر نگرانی ، زیادہ سٹاف، سیکیوریٹی آلات، گاڑیوں، پولیس چوکیوں اور تھانوں کی شدید ضرورت کو محسوس کیا جارہا تھا۔

ہم مقامی نمائندوں )ایم این اے /ایم پی اے) نے اس تکلیف کے ازالہ کے لیے 2020 میں مری میں دو اضافی تھانے بنانے کی تجویز دی اور محکمانہ سمریز تیار کروائیں جو مختلف محکمہ جات سے منظور ہوتی ہوئی آج اس مرحلے تک پہنچی ۔

حالیہ نوٹیفیکیشن کے مطابق دونوں تھانوں کے لیے مختلف رینکس کے 192 نئے پولیس ملازمین کی تعیناتی کی جائیگی ،آلات، گاڑیاں اور دیگر سازوسامان کی مد میں 15 کروڑ 80 لاکھ کے اخراجات سے یہ تھانہ جات جدید دور کے تمام تقاضوں سے ہمکنار ہونگے ۔

دو نئے تھانوں کے قیام اور ایک نئے ایس پی پولیس کی تعیناتی اور مری میں موجودگی سے مقامی لوگوں اور سیاحوں کے جان و مال کے تحفظ میں واضح بہتری آئے گی.

کھانا تاخیر سے کیوں کھولا؛ دلہا شادی ہی چھوڑ گیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں

twenty − four =