پاکستان میں خودکشی کی کوشش اب قابل سزا نہیں۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جمعہ کو خودکشی کی کوشش کے جرم کی سزا کی منسوخی کی توثیق کر دی۔ اس فیصلے کا اعلان اسی دن صدر کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ کے ذریعے کیا گیا۔

ٹویٹ کے مطابق، صدر علوی نے فوجداری قوانین (ترمیمی) بل 2022، اور غیر ملکی سرمایہ کاری ترمیمی بل 2022 کی منظوری دی۔

پاکستان پینل کوڈ (PPC) کی دفعہ 325، جو خودکشی کی کوشش کی سزا سے نمٹتی تھی، فوجداری قوانین (ترمیمی) بل کے ذریعے منسوخ کر دی گئی۔

اس ترمیم کے نتیجے میں پاکستان میں خودکشی کی کوششیں اب سزا سے مشروط نہیں رہیں۔

اس سے قبل، ایکٹ میں یہ شرط رکھی گئی تھی کہ جو کوئی خودکشی کرنے کی کوشش کرتا ہے اور کوئی ایسا کام کرتا ہے جس سے اس طرح کے ‘جرم’ کا ارتکاب ہوتا ہے، اسے جرمانہ یا ایک سال تک قید یا جرمانہ اور قید دونوں کی سزا دی جائے گی۔ .

صدر نے غیر ملکی سرمایہ کاری (فروغ اور تحفظ) ترمیمی ایکٹ بھی منظور کیا۔ دونوں بل آئین کے آرٹیکل 75 کے مطابق دائر کیے گئے۔

وقار ذکا کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری.

اپنا تبصرہ بھیجیں

11 − 11 =