ڈینگی بخار کی علامات اور علاج

syptoms of dengue and treatment

ڈینگی بخار کے بارے میں چند اہم حقائق

چار ڈینگی سے متاثرہ اشخاص میں سے ایک بیمار ہو جاتا ہے اور کمزوری محسوس کرتا ہے.

ڈینگی بخار میں مبتلا مثاثرہ شخص میں ہلکی اور شدید دونوں علامات ظاہر ہو سکتی ہیں.

یاد رکھیے!اگر سخت ڈینگی بخار ہوجائے تو بے احتیاطی کچھ دنوں مٰیں جان لیوا ثابت ہو سکتی ہے.

ڈینگی بخار کی علامات کیا ہیں؟

علامات دو سے سات دنوں میں ظاہر ہو سکتی ہیں. ہلکے پھلکے ڈینگی بخار میں عمومن لوگ ایک ہفتے مٰیں صحت یاب ہو جاتے ہیں.

بخار کے ساتھ درج ذیل علامات ظاہر ہوسکتی ہیں:

پٹھوں میں درد محسوس ہو سکتا ہے؛
ہڈیوں میں سخت درد کا احساس ہو سکتا ہے؛
شدید سر درد کا سامنا کر نا پڑ سکتا ہے؛
جوڑے مٰیں درد بھی ہو سکتی ہے؛
متلی ہو سکتی ہے، اُلٹیاں آسکتی ہیں؛
آنکھوں کے پیچھے درد کا احساس ہو سکتا ہے؛
جلد پر سخت ریش نمودار ہو سکتے ہیں.

ڈینگی بخار سے بچاؤ کیسے ممکن ہے یا ڈینگی بخار کا علاج کیا ہے؟

ڈینگی بخار سے بچاؤ کے لئے کوئی مخصوص علاج یا دوائی دستیا ب نہ ہے.تاہم چند احتیاطی تدابیریں ہیں جن پر عمل کر کے ڈٰینگی بخار کا مقابلہ کیا جاسکتا ہے:

اگر آپ کو ڈینگی ہو گیا ہے تو زیادہ سے زیادہ آرام کریں اور باہر جانے سے پرہیز کریں؛

پانی کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں ، اناج کا استعمال کم کریں؛

مشروبات کا زیادہ استعمال کریں.پھلوں کے جوس ڈینگی کے مریض کے لئے نہایت مفید ہیں؛

آرام نہ آنے کی صورت میں ڈاکٹر سے رجوع کریں؛

پیراسٹامول استعمال کریں؛

اسپائرن کا استعمال ہر گز نہ کریں؛

ہلکی پھلکی علامات ہوں تو گھر پر ہی علاج کریں؛

شدید ڈینگی بخار کی علامات اور علاج

ڈینگی سے متاثر ہونے والے بیس افراد میں سے ایک کو شدید ڈینگی بخار ہو سکتا ہے؛

شدید ڈینگی بخار ہوجائے تو سخت صدمہ ہو سکتا ہے، جسم سے خون آنا شروع ہو جاتا ہے .حتیٰ کہ موت واقع بھی ہو سکتی ہے؛

اگر آپ کو ماضی میں ڈینگی ہوا تھا تو آپ کو شدید ڈینگی بخار ہونے کے امکانات بہت زیادہ ہیں ؛

اسی طرح نومولود بچوں اور حاملہ خواتین میں شدید ڈینگی کے امکانات بڑھ جاتے ہیں؛

مریض کی چوبیس سے اڑتالیس گھنٹوں میں طبیعت شدید بگڑ سکتی ہے.

خون کی اُلٹیاں(قے) آسکتی ہیں؛

نکسیر پھوٹ سکتی ہے(یعنی ناک سے خون بہہ سکتا ہے)؛

پاخانے میں خون آسکتا ہے؛

پیٹ میں شدید درد محسوس ہو سکتی ہے؛

حد سے زیادہ تھکاوٹ، بے چینی اور چڑ چڑا پن محسوس ہو سکتا ہے.

شدید ڈینگی بخار کا کیا علاج ہے؟

اگر شدید ڈینگی بخار ہوجائے تو ہر گز گھر پر قیام نہ کریں بلکہ فوری ہسپتال جائیں اور معالج سے رابطہ کریں؛

سخت ڈینگی کی صورت میں دوائیوں کے ذریعے ہی علاج ممکن ہو سکتا ہے؛

ہنگامی وارڈ میں علاج کے لئے جائیں تاکہ فوری طبی امداد مل سکے.

تجزیہ

درج بالا سطروں کی روشنی میں یہ کہنے میں کوئی امر مانع نہ ہے کہ ڈینگی بخار کو اگر سنجیدگی سے نہ لیا جائے تو یہ جان لیوا بھی ثابت ہوسکتا ہے.لہذا اگر کوئی فردبھی اس بخار میں مبتلا ہوتا ہے تو ہرگز بے احتیاطی نہ کرے.

زیادہ ٹینشن لینے کی کوئی ضرورت نہیں کیونکہ ڈینگی بخار کی صورت میں صحت یابی کے امکانات قدرے زیادہ ہیں.بطور مسلمان ہمارا ایمان ہے کہ ایک دن ہر انسان نے دنیا سے جانا ہے مگر بے احتیاطی اور غیر سنجیدگی کا مظاہر ہ کر کے ہر گز از خود اپنی جان کے دشمن نہ بنیں.

فرحان بٹ
گزیٹڈ افسر حکومت پنجاب

خاموشی کی کہانی ایک دلچسپ تحریر

یوٹیوب چینل بنانے کا آسان اور مفصل طریقہ ، آپ بھی لاکھوں کما سکتے ھیں-

اپنا تبصرہ بھیجیں