(بابر اعظم ایک روزہ کرکٹ میں نمبر ون بلے باز بن گئے) – Babar Azam

Babar Azam
babar azam ODI Ranking

Who is Babar Azam

بابر اعظم کون ہے؟

بابر اعظم اکمل برادرز (کامران، عمر اور عدنان) کے کزن ہیں اور انہیں اکثر باصلاحیت اوپننگ بلے باز کے طور پر جانا جاتا ہے۔ وہ 2009 میں سری لنکا اور بنگلہ دیش انڈر – 19 سمیت سہ فریقی سیریز میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی تھے۔

انڈر – 19 کی سطح پر ان کی مستقل مزاجی نے سلیکٹرز کو اپنی قومی ٹیم کے لیے کھیلنے کا موقع فراہم کرنے پر مجبور کیا۔

بابر اعظم نے کرکٹ کا آغاز کب کیا؟

انہیں زمبابوے کے خلاف کھیلے جانے والی گھریلو سیریز کے لیے پاکستانی اسکواڈ میں شامل کیا گیا. جہاں انہیں اپنی سرزمین پر ڈیبیو کرنے کا شاندار موقع ملا۔ بابر نےاپنے ڈیبیو میں روانی سے پچاس رنز بنائے اور اسٹروک بنانے کی زبردست صلاحیت کی جھلک دکھائی۔

بابر نے پھر جولائی میں سری لنکا کے دورے کے لیے قومی کرکٹ ٹیم میں اپنی جگہ برقرار رکھی. جہاں وہ پانچ میچوں کی سیریز (اگست 2015 تک) کے صرف 2 ون ڈے کھیل سکے۔

بابر اعظم کی بلندی کا آغاز کس سیریز سے ہوا؟

جب بابر اعظم نے 2017 کے اوائل میں اپنی 25ویں اننگز میں ویسٹ انڈیز کے خلاف اپنا 5 واں ون ڈے سنچری اسکور کیا، تو وہ کوئنٹن ڈی کاک کے بعد پانچ ون ڈے سنچریاں بنانے والے دوسرے تیز ترین کھلاڑی بن گئے۔ 25 دستکوں کے بعد ان کے مجموعی 1306 رنز نے جوناتھن ٹراٹ(سابقہ انگلش کرکٹر) کے نمبروں کو پیچھے چھوڑ دیا۔

بابر اعظم کی زندگی واقعی تیز رفتاری سے گزر رہی ہے۔ متحدہ عرب امارات میں 2016 میں ونڈیز کے خلاف ان کے مسلسل تین ون ڈے سنچری ایک شاندار کیریئر کا پیش خیمہ تھے ۔

کیا بابر نے 2010 میں پندرہ سال کی عمر میں انڈر نائنٹین ورلڈ کپ کھیلا؟

جب سے انہیں 2010 کے ورلڈ کپ کے لیے پاکستان کی انڈر 19 ٹیم میں پندرہ سال کی عمر میں شامل کیا گیا تھا. ایسا لگ رہا تھا کہ جیسے ایک اور خام ٹیلنٹ سامنے آ گیا ہے۔

2012 میں ایک اور انڈر 19 ورلڈ کپ مہم کا آغاز ہوا۔ اس بار وہ کپتان تھے۔ پاکستان کو حتمی فاتح بھارت کے ہاتھوں ناک آؤٹ کر دیا گیا. لیکن بابر نے اپنی ٹیم کے لیے سب سے زیادہ رنز بنانے کے لیے رنز کا ڈھیر لگا دیا۔

کیا بابر اعظم کو کرکٹنگ کیرئیرمیں مشکلات کا سامنا بھی کر نا پڑا؟

سفری پوسٹ جو ڈومیسٹک سسٹم کے ذریعے تھی اور 2016 میں اس کا موقع آیا. بابر نے اسے یو اے ای میں ونڈیز کے خلاف خیموں کی طرح بڑے ہاتھوں سے پکڑ لیا۔ کیریبین ٹیم کے خلاف ٹیسٹ ڈیبیو بھی اچھا رہا اور پریوں کی کہانی کا تسلسل برقرار رہا۔

لیکن خامیوں کو 2016 کے آخر میں اور 2017 کے اوائل میں آسٹریلیا کے باؤنسی ٹریک پر سفید فاموں میں کھول دیا گیا تھا۔ لیکن اس حقیقت کو دیکھتے ہوئے کہ وہ ویرات کوہلی کے کارناموں کی تقلید کرنا چاہتے ہیں اور اے بی ڈی کو آئیڈیلائز کرنا چاہتے ہیں. ماہرین کا کہنا تھا کہ بابر کوئی نہ کوئی راستہ ضرور نکالیں گے۔

کیا بابر اعظم ایک روزہ کرکٹ مٰیں پہلے نمبر پر آگئے ہیں؟

بابر اعظم سردست ایک روزہ کرکٹ میں پہلی رینکنگ پر ہیں.بابر نے دنیا کے عظیم بلے باز ورات کوہلی کو بھی پیچھے چھوڑ دیا .ورات ایک روزہ کرکٹ رینکنگ میں دوسرے نمبر پر ہیں.جبکہ بھارت کے روہیت شرما ایک روزہ ورلڈ رینکنگ میں تیسرے نمبر پر ہیں.

کیا بابر اعظم کے پاس ایک روزہ کرکٹ میں تیز ترین 2000 رنز بنانے کا ریکارڈ ہے؟

جنوبی افریقہ میں دائیں ہاتھ کے کھلاڑی کی کارکردگی انہیں اپنے کیریئر میں پہلی بار ICC ODI مردوں کی بیٹنگ رینکنگ میں سرفہرست مقام پر پہنچانے کے لیے کافی تھی۔

اس کے ساتھ ہی اس نے مردوں کی ون ڈے بیٹنگ رینکنگ میں ہندوستانی کپتان ویرات کوہلی کی طویل حکمرانی کا خاتمہ کیا – وہ مقام جس پر وہ اکتوبر 2017 سے فائز تھے – بابر اس پوزیشن پر فائز ہونے والے صرف چوتھے پاکستانی کھلاڑی بن گئے۔

کیا بابر اعظم پاکستان کھلاڑیوں میں سب سے عظیم ترین بلے باز ہیں؟

پچھلے تینوں کو دیکھتے ہوئے – ظہیر عباس (1988-84)، جاوید میانداد (1988-89) اور محمد یوسف (2003) – یہ تمام پاکستانی کرکٹ کے عظیم کھلاڑی ہیں، بابر اچھی کمپنی میں ہیں۔

پومی مبانگوا (سابق زمبابوین کرکٹر اور کمنٹیٹر ) کے بابر کے بارے میں‌کیا خیالات ہیں؟

آئی سی سی ووٹنگ اکیڈمی کے رکن، کمنٹیٹر اور سابق تیز رفتار پومی مبانگوا نے کہا، “بابر اپنی صلاحیتوں کی نمائش کے ساتھ عام طور پر شائقین اور کرکٹ کی دنیا کو مسحور کیے ہوئے ہیں۔”

“وہ اتنا سجیلا ہے کہ جب بھی وہ رنز بناتا ہے، اور ایسا لگتا ہے کہ ہمیشہ، اس کی اننگز کا مجموعہ اور ان رنز کا مجموعہ دیکھنے کو ملتا رہے۔

“یہ کہ وہ آئی سی سی ون ڈے بیٹنگ رینکنگ میں سرفہرست ہے. اتنے کم عمر ہونے کے باوجود، وہ موجودہ کھیل میں موجود بہترین کھلاڑیوں میں شامل ہیں۔ وہ یقیناً ایک ماہر کاریگر ہے ‘‘

ون ڈے بیٹنگ رینکنگ میں سرفہرست ہیں. اور اس سے قبل ٹی ٹوئنٹی میں بھی ایسا ہی کر چکے ہیں. بابر نے اب ٹیسٹ کرکٹ میں بھی ایسا ہی کرنے پر نظریں جما رکھی ہیں۔

بابر اعظم کے اپنے اب تک کے کرکٹنگ کیرئیر کے بارے میں کیا خیالات ہیں؟

کہنا ہے کہ، “میں ظہیر عباس، جاوید میانداد اور محمد یوسف جیسے عظیم بلے بازوں کی کمپنی میں شامل ہونے پر فخر اور اعزاز محسوس کرتا ہوں.وہ ہمیشہ پاکستان کرکٹ کے چمکتے ستارے رہیں گے۔”

“میں پہلے بھی T20I رینکنگ میں سرفہرست رہ چکا ہوں. لیکن حتمی خواہش اور ہدف ٹیسٹ رینکنگ میں برتری حاصل کرنا ہے. جو کہ ایک بلے باز کی صلاحیت، ساکھ اور مہارت کا اصل ثبوت اور انعام ہے۔”

تجزیہ

یہ امر قابل ذکر ہے کہ بابر اعظم سردست دنیا کے بہترین کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں.دنیا کے عظیم بلے باز ورات کوہلی نے خود کئی مقامات پر بابر کی بہت اچھے الفاظ میں تعریف کی ہے اور بابر کو ایک عظیم بلے باز قرار دیا ہے.

کچھ لوگ اکثر بابر کو ورات سے بہترین بلے با ز کہتے نظر آتے ہیں.یہ بالکل جائز نہ ہے. کیونکہ ورات کوہلی کرکٹ ماہرین کی نظر میں دنیا کے دس عظیم ترین بلے بازوں میں سے ایک ہیں.جس کا ثبوت اُن کا اب تک کا کرکٹنگ کیرئیر ہے .

بابر اور ورات کا موازنہ کریں تو بابر ابھی ورات سے کافی پیچھے ہیں.تاہم بھارت کے سابق عظیم بلے باز سنیل گواسکر بابر کے بارے میں کہتے ہیں کہ بابر دنیا کے نمبر ون بلے باز ورات کوہلی کے پیچھے بہت تیزی سے بھاگ رہے ہیں. یعنی بابر ابھی اُس لیول تک پہنچے کی کوشش کر رہے ہیں.اور بابر کی کارکردگی سے اُمید کی جاسکتی ہے کہ بابر اُس معیار تک پہنچ جائیں گے.

ایف آئی آر (مقدمہ) کی تفتیش تبدیل کروانے کا طریقہ کار

علامہ اقبال کی شاعری

اپنا تبصرہ بھیجیں